61

گورنمنٹ گرلز ہائیر سکینڈری سکول راجدہانی کی بچیاں سکول کی لائبریری والے کمرے میں پڑھنے پر مجبور

( اسرار حسین راجہ . رپورٹر ) رقبے کے لحاظ سے ضلع کوٹلی کا سب سے بڑا سکول اور عمارت کی حالت حکومت آزاد کشمیر اور محکمہ تعلیم کی نالائقی اور عدم دلچسپی کا منہ بولتا ثبوت گورنمنٹ گرلز ہائیر سکینڈری اسکول راجدہانی ہے جس میں کلاسز کے لئے کمرے نہ ہونی کی واجہ سے مشکل پیش آرہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ گرلز ہائیر سکینڈری سکول راجدہانی میں کمرےنہ ہونی کی واجہ سے بچیوں کے لیے گلاس لائبریری کے اندر اور سٹور روم کی صفائی کے بعد اس میں لینے پر مجبور ہیں۔

پہلے جب یہ سکول  کلاس 10th تک جب تھا تو کسی قسم کی کوئی پریشانی نہیں تھی مگر جب سے حکومت نے اس کو اپ گریٹ کا نوٹیفیکیشن جاری کیا تو سکول کے اندر  سال اول اور سال دوئم کی کلاسز کا باقاعدہ آغاز بھی شروع ہو گیا

مگر ان کلاسز کے لئے کوئی کمرے ماجود بھی ہے یا نہیں چیک نہیں کیا گا اور نہ ہی کسی قسم کا کوئی فنڈ دیا گیا۔جس کے بعد باعث مجبوری پرنسپل نے کلاس اول ،کلاس دوئم کو لائبریری اور سٹور روم میں شفٹ کر دیا۔ ابھی ان کلاسز کے لئے کسی قسم کا کوئی خاص انتظام نہ ہوا تھا۔ کلاسز کی منیجمنٹ پرنسپل صاحبہ کے لئے سر درد بنی ہوئی تھی سکول کے اندر کلاسز کے لئے پہلے ہی جگہ کم پڑا رہی تھی۔

کہ اوپر سےحکومت کی جانب سے پلے روم کا آغاز شروع کر دیا۔ جس کے لئے سامان بھی سکول کےلئے بھجوادیا گیا۔یہ اب کہا اور کب شروع ہو گا۔ حکومت ایسے کام کرنے سے پہلے دیکھ لے کیا ان کاموں کے لئے سکولوں کے اندر جگہ ماجود ہے یہ پھر نمبر بنانے کے چکر میں صرف پیسوں کا فضول خرچ کیا جاتا ہے۔جس چیز کی ضرورت ہو اس کو پہلے  پورا کیا جائے پھر یورپ کی نکل کی جائی۔راجدہانی کی عوام سرپا احتجاج۔حکومت کو اس پر فوری توجوہ دے اور فلفور سکول کے اندر کلاسز کے لئے  مزید 4 کمرے بنوائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں