80

پشاور ملین مارچ

پشاور ملین مارچ اور سوشل میڈیا پر کوریج کی زمہ داری،
جوں جوں 25 تاریخ نزدیک آرہا ہے،،
جماعتی ساتھیوں اور قائدین زور وشور سے اپنی بساط کے مطابق تشہیری اور عملی میدان میں پشاور ملین مارچ کیلئے مصروف عمل ہے جو بہت حد تک کامیاب رہے،
اور اس کامیابی کا سہرا صوبائی کابینہ خاص کر آمیر محترم مولانا عطاء الرحمن صاحب اور جنرل سیکرٹری مولانا عطاء الحق درویش صاحب کے سر جاتا ہے،
جو منتخب ہوتے ہی مخلف اضلاع اور تحصیل کے دورے کرکے پشاور ملین مارچ کیلئے پروگرام مرتب کئے،،
اب اصل امتحان ہوگی ملین مارچ کی کوریج،،
جیسے ہم پہلے ہی سے الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کا رونا رو رہے جو ہمیں کوریج نہیں دیتی،،
اسلئے اب ہمارے پاس صرف سوشل میڈیا ہی ہتھیار ہے جو ہماری اپنی ہاتھوں میں ہے۔
اسکو ہم کیسے اور کس طرح کوریج کرکے اپنی آواز دوسروں تک پہنچائینگے۔
اسکے لئے ہماری قائدین سے گزارش ہے کہ،،،،
جلد از جلد سوشل میڈیا ساتھیوں کا اجلاس بلائے،
خاص کر ان ساتھیوں کو جس کے پیجز کی لائک اور فالوورز کم از کم بیس ہزار سے پچیس ہزار تک ہو،
اور خاص کر ان پیجز والوں کو بھی مدعو کرنا چاہئے جو مختلف ناموں سے نیوز چینل کی شکل سے پیج چلارہے ہے
جیسے چارسدہ نیوز، پشاور، مردان، صوابی، ختم نبوت نام سے وغیرہ وغیرہ،
تاکہ ہماری آواز ہر طبقہ فکر لوگوں تک پہنچ جائے،
اور سوشل میڈیا کے وہ تمام پیجز والوں کو خصوصی کارڈ جاری کردیا جائے،،
اہم بات یہ ہے کہ ان سوشل میڈیا ساتھیوں کیلئے سٹیج کے نزدیک علیحدہ کنٹینر کا انتطام کیا جائے تاکہ کوریج میں آسانی ہو کیونکہ ہمارے زیادہ تر ساتھی کوریج موبائل سے کرتے ہے جو دور سے کوریج میں دشواری ہوتی ہے،
آفیشل پیج کی زیادہ زمہ داری بنتی ہے کہ وہ لازمی بہترین کوریج کیلئے اپنی پوری صلاحیت بروئے کار لائے،
انشاءاللہ پشاور ملین مارچ کو تاریخی بنائے گا،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں