47

پی کے 115 کون بنے گا فاتح

( عبد الرشید‎ . ڈسٹرکٹ رپوٹر ) پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ فاٹا میں صوبائی اسمبلی انتحابات میں عوام کو ووٹ ڈالنے کا حق حاصل ہوا عوام میں خوشی کی لہر الیکشن کی تیاریاں مکمل
20 جولائی کو میدان سجے گا
حلقہ پی کے115سے تین اُمیداور جن میں پاکستان تحریک انصاف کے عا بد رحمان،
جمعیت علماء اسلام (ف) کے حاجی شعیب آفریدی
اور عوامی نیشنل پارٹی کے قادر بٹینی کے درمیان سخت مقابلہ متوقع
پی کے 115قبائلی اضلاع میں رقبے کے لحاظ سے سب سے طویل حلقہ ہے کیونکہ ضلع پشاور سے شروع ہوتاہے جو کہ صوبہ خیبرپختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقے کھوئی بہارہ کھوئی پیور پرختم ہوتاہے۔ چھ مختلف علاقوں یعنی ایف ار پشاور، کوہاٹ، بنوں، لکی مروت، ٹانک اور ایف آر ڈیرہ اسماعیل خان پر مشتمل حلقے کے حصے میں قومی اسمبلی کے این اے 51 ہے۔ چھٹی مردم شماری کے تحت پوری ایف ار ریجن کی آباد ی 3لاکھ 57ہزار687ہے جبکہ الیکشن کمیشن کے مطابق مزکورہ حلقے میں ٹوٹل رجسٹرڈ ووٹ ایک لاکھ91ہزارہیں، جس میں 74ہزار618خواتین کے ووٹ ہیں۔
قبائلی اضلاع کے دوسرے حلقوں کے نسبت حلقہ پی کے 115میں انتخابی اُمیدواروں کے مسائل اور مشکلات کافی
زیادہ ہے کیونکہ انتخابی مہم چلانا اور لوگوں سے ووٹ لیکر کامیاب ہونا معجزہ سمجھا جاتا ہے۔
اسی حلقے پر کل آزاد امیدواروں سمیت تقریباً 10 اُمیدوار میدان میں ہیں جن میں حاجی شعیب آفریدی جمعیت علماء اسلام کے ٹکٹ پر انتخابات میں حصہ لے رہا ہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کا اُمیدوار عابدرحمان
اور ٹانک سے سابق ممبرصوبائی اسمبلی قادر بیٹنی عوامی نیشنل پارٹی کے ٹکٹ پر انتخابات میں قسمت آزمائی کررہا ہے۔
ایف آر ریجن کے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 51سے متحدہ مجلس عمل کے اُمیدوار مولانا عبدلشکور کامیاب ہوا تھا جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے اُمیدواراور سابق ممبر قومی اسمبلی قیصر جمال دوسرے جبکہ سابق پارلمنٹرین اور کاروباری شحصیت حاجی باز گل نے تیسری پوزیشن حاصل کیا تھا۔ تاہم اس دفعہ حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کے اُمیدوار عابدرحمان پر اپنے ہی پارٹی کے کارکن پچھلے عام انتخابات میں قیصرجمال کے مقابلے میں حاجی باز گل کو پس پردہ سپورٹ کرنے کا الزام لگا رہے ہیں جس کا اثرآنے والے صوبائی الیکشن کے انتخابات پر دیکھنے کو مل رہے ہیں.لیکن اس کے باوجود عابد الرحمٰن کی پوزیشن بہتر ہے کیونکہ پاکستان تحریک انصاف کے ورکرز مسلسل کمپین چلا رہے ہیں گھر گھر تحریک انصاف کا پیغام پہنچا رہے ہیں ایف آر ڈی آئی خان میں محمد امین شیرانی سردار ولی خان شیرانی اور حاجی بوستان استرانہ ملک ظفر استرانہ سوشل میڈیا پر سید جبار ستوریانی کا فی متحرک نظر آتے ہیں

جبکہ دوسری جانب ایف آر ڈی آئی خان میں جمعیت علماء اسلام کے علاقی مشران تحصیل امیرشاکراللہ شاہ صاحب مولانا محمد یعقوب شیرانی کامل شیرانی ظہور خان استرانہ رحمت شاہ استرانہ اور ورکروں نے الیکشن مہم میں بھرپور حصہ لیا

حاجی شعیب کی کامیابی اس وجہ سے بھی دیکھائی دے رہی ہے کہ یہاں سے کامیاب ممبر قومی اسمبلی مولانا عبدالشکور کے حمایت بھی اس کو حاصل ہے

قادر بیٹنی جو کہ اے این پی کے ٹکٹ پر حلقہ پی کے 115 سے صوبائی اسمبلی کے نشست پر انتحابات میں حصہ لے رہا ہے
عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماؤں نے غلام قادر بیٹنی کی الیکشن مہم میں حصہ لینے کی وجہ یہ بھی بتائی جارہی ہے کہ اس مرتبہ
عوامی نیشنل پارٹی کی قیادت قبائلی علاقوں سے
پاکستان تحریک انصاف اور جمعیت علماء اسلام دونوں پارٹیوں کا صفایا کرنے کی نیت سے میدان میں اتری ہے
ایف آر ڈی آئی خان میں بھی عوام نیشنل پارٹی کی الیکشن مہم جوش و جذبے کے ساتھ جاری ہے عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی نائب صدر شاہی خان شیرانی اور حاجی محمد رمضان استرانہ دن رات الیکشن کمپین چلانے میں مصروف ہیں
اب عوام فیصلہ کرے گی
کے کس کے سر پر جیت کا تاج سجائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں