36

گجرات پولیس کی بڑی کامیابی

( محمد زاہد خورشید . ڈسٹرکٹ رپورٹر‎ ) چند روز قبل کراچی کے ہسپتال سے اغواء ہونے والا نومولود بچہ گجرات پولیس نے بازیاب کروا
لیا ۔ اغواء کار میاں بیوی او ربیٹی گرفتار ۔
تفصیلات کے یکم جولائی 2019؁ء کو کراچی کے عباسی شہید ہسپتال سے نومولود بچہ اغواء ہو گیا تھا۔ جس کا مقدمہ تھانہ ناظم آباد میں درج ہوا۔

ملزمان کی گرفتاری اور شناخت کے لئے وقوعہ کی CCTVفوٹیج سوشل میڈیا پر وائرل کی گئی تھی۔ ڈی پی او گجرات سید علی محسن نے فوٹیج موصول ہونے پر تمام تھانہ جات کے ایس ایچ اوز کو ویڈیوکا بغور ملاخطہ کرنے کی ہدائیت جاری کی۔اسی دوران ایس ایچ او تھانہ ٹانڈہ ایس آئی تنویر بھٹی کو اطلاع موصول ہوئی کہ قاضی چک کی خاتون مسمات شبانہ آرزو زوجہ حافظ عبدالرشید جو کہ بانجھ عورت ہے جس کے ہاں اولاد نہ تھی کہ پاس نومود بچہ ہے

جس پر ایس ایچ او تھا نہ ٹانڈہ ایس آئی تنویر بھٹی نے فوری طور پر ڈی پی او گجرات سید علی محسن اور ڈی ایس پی صدر سعید خان کو اطلاع دی۔جس پر ڈی پی او گجرات نے فوری طور پر مشکوک عورت کو انٹیروگیٹ کرنے کی ہدائیت کی۔
ایس ایچ او ٹانڈہ نے لیڈیز پولیس اور دیگر اہلکاروں پرمشتمل ٹیم تشکیل دے کر خاتون اسکے شوہر حافظ عبد الرشید اور بیٹی عائشہ رشید کو حراست میں لے کر تفتیش کا آغاز کیااور کراچی پولیس سے رابطہ کر کے عباسی شہیدہسپتال سے اغوا ہونے والے نومولود بچے کے اغوا کی واردات کی مزید واضع فوٹیج منگوائیں جو کہ گرفتار ہونے والے ملزمان سے میچ کر گئیں۔

دوران انٹیروگیشن ملزمان نے اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ شادی کے کافی سالوں بعد اُ نکے ہاں اولاد نہ ہوئی جس پر شبانہ آرزو نے کراچی میں رہنے والی اپنی دوست کو بات بتائی جس نے اُسے کراچی آنے اور بچہ دلوانے کا کہا۔جس کے بعد وہ کراچی چلی گئی جہاں پر اُ سکی دوست کا دیور اُنھیں عباسی شہید ہسپتال لے گیا اوروارڈ میں موجود نومولود بچے کو اٹھا کر فرار ہو گئے اور بعد ازاں بچے کو لے کر واپس گجرات آگئے۔
ڈی پی او گجرات سید علی محسن نے ایس ایچ او تھانہ ٹانڈہ کو فوری طور پر کراچی پولیس سے رابطہ کر بچے کو اُ سکے اصل والدین کے حوالے کرنے کی ہدائیت کی۔جس پر نومولود بچے کو اُسکے اصل والدین کے حوالے کر دیا گیا۔جس پر بچے کے والدین نے ڈی پی او گجرات اور گجرات پولیس کا شکریہ ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں