26

سوشل میڈیا کے متعلق 30 ہزا رشکایات

قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کام کو ایف آئی اے حکام نے بتایا کہ سوشل میڈیا کے حوالے سے 30 ہزا رسے زائد شکایات موصول ہوئیں۔ ملازمین کی کمی کے با عث شکایات کے ازالہ میں وقت لگتا ہے۔ ایف آئی اے کے سائبر ونگ میں جون کے بعد 406 نئی بھرتیاں کی جائیں گی۔

قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کام کا اجلاس چیئرمین علی خان جدون کی صدارت میں ہوا۔ ممبران نے وفاقی وزارتوں کی ویب سائٹس پر اپ ڈیٹ معلومات کی عدم دستیابی پر برہمی کا اظہار کیا۔ چیئرمین پی ٹی اے نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ شکایات کے ازالہ کے لئے فیس بک تعاون کرتا ہے تاہم ٹویٹر کی جانب سے تعاون نہیں کیا جاتا۔ ڈی جی ایف آئی اے نے کہا کہ سائبر ونگ کو ہیومن ریسورس کی کمی کاسامنا ہے، 114 اہلکار ونگ میں کام کر رہے ہیں۔

ممبر قومی اسمبلی ناز بلوچ نے تجویز دی کہ خواتین کی شکایات کے لئے الگ کال سینٹر قائم ہونا چاہیے۔ ڈی جی ایف آئی اے نے کہا کہ ایف آئی اے میں 406 پوسٹوں میں 25 فیصد خواتین کو شامل کیا گیا ہے۔ وفاقی سیکرٹری آئی ٹی نے کہا کہ وزارت سائبر سکیورٹی کے لئے قومی ڈیٹا بیس پر کام کر رہی ہے، تمام محکمے قومی ڈیٹا سنٹر سے منسلک کیے جائیں گے۔

سیکرٹری آئی ٹی نے کہا کہ 42 میں سے 26 وزارتیں ای آفس کے لیول ٹو پر ہیں۔ رواں سال کے آخر تک تمام وزارتوں کو ای آفس کے لیول ون پر لے آئیں گے۔ این آئی ٹی بی حکام نے بتایا کہ آئندہ سال جون تک تمام وزارتوں کو لیول فور پر لے جائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں