47

آن اسکرین ہٹلر بننے والے اداکار برونو گنز چل بسے

جرمن و انگریزی فلموں کے نامور اداکار برونو گنز کچھ عرصے علیل رہنے کے بعد 77 برس کی عمر میں چل بسے۔

برونو گنز کو سب سے زیادہ شہرت جرمنی کے سابق ڈکٹیٹر بادشاہ ایڈولف ہٹلر کی زندگی پر بنائی جانے والی فلم میں کام کرنے پر حاصل ہوئی۔

برونو گنز نے اگرچہ 200 کے قریب جرمن، فرینج اور انگریزی سمیت یورپ کی دیگر مقامی زبانوں کی فلموں میں کام کیا، تاہم انہیں شہرت 2004 میں ریلیز ہونے والی فلم ’ڈاؤن فال‘ سے حاصل ہوئی۔

برونو گنز ’ڈاؤن فال‘ سے قبل بھی کئی متعدد مشہور فلموں میں کام کر چکے تھے اور انہیں شہرت حاصل تھی، تاہم ہٹلر کا کردار ادا کرنے کے بعد وہ بے حد مقبول ہوئے۔

برونو گنز نے ’ڈاؤن فال‘ میں شاندار طریقے سے ایڈولف ہٹلر کا کردار ادا کیا جس وجہ سے انہیں متعدد ایوارڈز سے نوازا گیا۔

اگرچہ ان کی فلم کو آسکر کے لیے بھی نامزد کیا گیا تھا، تاہم فلم معتبر ایوارڈ حاصل کرنے میں ناکام ہوگئی تھی۔

برونو گنز سوئٹزرلینڈ میں پیدا ہوئے تھے اور وہیں ان کا انتقال ہوگیا۔

شوبز ویب سائٹ ’ورائٹی‘ کے مطابق برونو گنز کچھ عرصے سے کلون کینسر میں مبتلا تھے اور ان کا علاج جاری تھا۔

رپورٹ کے مطابق برونو گنز زیورچ میں اپنی رہائش گاہ پر چل بسے اور ان کی اہل خانہ نے ان کی مر جانے کی تصدیق کی۔

برونو گنز کی دیگر معروف فلموں میں ’ونگس آف ڈزائر، دی بوائز فرام برازیل، اسٹریپ لیس، دی منچورین کینڈیڈیٹ، دی ریڈر، ان ناؤن، رمیمبر، نائٹ ٹرین ٹو لزبین، دی لاسٹ ڈیز آف شیز نوز اور دی پارٹی‘ سمیت دیگر شامل ہیں۔

برونو گنز کو مجموعی طور پر 50 سے زائد ایوارڈز سے نوازا گیا۔

ان کی جانب سے ایڈولف ہٹلر کا کردار اتنا پسند کیا گیا تھا کہ انٹرنیٹ پر ان کی تصاویر اور ویڈیو کلپس کی دھوم مچ گئی تھی اور ان کی اداکاری کی متعدد فنکاروں نے نقل کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں