کراچی ایکسپورٹ پروسیسنگ

( محمد شفیق – ای این این نمائندہ )

کراچی ایکسپورٹ پروسیسنگ زون میں گلیکسی اور کوالٹی کریم فیکٹری کے ملبے کی آڑ میں قیمتی سامان پار کرنے کی تیاریاں زوروں شور سے جاری شوز آئرن سکریپ پی وی سی پولی بیگ مشینوں کے موٹر کمپیوٹر چھالیہ پلاسٹک دانہ ،

کیا چیرمین کراچی ایکسپورٹ پروسیسنگ زون بے خبر؟
تفصیلات کے مطابق کچھ دن پہلے کوالٹی کریم اور گلیکسی کمپنی میں آگ لگنے کے واقعات میں جلنے والی فیکٹریز کے ملبے کی آڑ میں الوتک کمپنی کے شوز کیجول کمپنی کی آئرن سکریپ پلاسٹک دانہ پولی بیگ چھالیہ اور بہت کچھ سیکورٹی اور کسٹم حکام کی مدد سے بغیر کسٹم ادا کیے باہر نکالا جارہا ہے

اور قومی خزانے کو کروڑوں کا چونا لگایا جارہا ہے ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ سکیورٹی کا ریٹ فی ڈمپر 25 سے 30000 کسٹم کا ریٹ فی ڈمپر 100000 سے 150٫000 اور سیکرٹری کے ڈمپرز کو اپرول کاریٹ الگ ہے جسمیں ایک ساتھ کئی ڈمپر کی اپرول دیجاتی ہے اور کتنے جاتے ہیں کوئی گننے کی زحمت نہیں کرتا

ذرائع بتاتے ہیں کہ ملبے کی آڑ میں جو سامان لے جایا جاتا ہے اسکو ڈمپ کرنے کے لیے لیبر اسکوائر کے نزدیک کئ گودام بھی کرائے پر لیے گئے ہیں ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ ہر ڈمپر میں چوری کا مال نہیں لے جایا جاتا جس ڈمپر میں مال موجود ہوتا ہے اسکو پوری حفاظت سے منزل پر پہنچایا جاتا ہے یہ سلسلہ سالوں سے چل رہا ہے جب سختی آتی ہے تو کچھ دنوں کے لئے روک دیا جاتا ہے اسکے بعد دوبارا سٹارٹ کردیا جاتا ہے اسکے علاوہ ملبے کی آڑ میں سکریپ کا کام سارا سال چلتا رہتا ہے

یہ خبر ( محمد شفیق – ای این این نمائندہ ) نے ارسال کی ہے۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

مانسہرہ : ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر قاسم علی خان کا مانسہرہ کے بازار کا دورہ

منگل اکتوبر 27 , 2020
مانسہرہ (نعمان اعوان کرائم رپورٹر ) مانسہرہ : ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر قاسم علی خان کا مانسہرہ کے بازار کا دورہ یہ خبر (نعمان اعوان سٹی کرائم رپورٹر) نے ارسال کی ہے.

کیلنڈر

جنوری 2021
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 123
45678910
11121314151617
18192021222324
25262728293031
%d bloggers like this: