ڈونلڈ ٹرمپ کی وجہ سے فیس بک کے بانی مارک زکربرگ بڑی مشکل میں پھنس گئے، سخت تنقید کا سامنا

ایک طرف صدر ٹرمپ کی ٹویٹس فلیگ کرنے پر ٹوئٹر کے ساتھ ان کی کشمکش جاری ہے اور دوسری طرف ٹوئٹر کی طرح صدر ٹرمپ کی پوسٹس کو فلیگ یا ڈیلیٹ نہ کرنے پر شہری حقوق کے لیڈرز فیس بک کے بانی مارک زکربرگ پر برس پڑے ہیں۔

میل آن لائن کے مطابق صدر ٹرمپ کی جن ٹویٹس کو ٹوئٹر نے فلیگ کیا وہ فیس بک پر پوسٹس کی صورت میں تاحال موجود ہیں۔ شہری و انسانی حقوق کے لیڈرز نے مارک زکربرگ اور فیس بک کی چیف آپریٹنگ آفیسر شیریل سینڈبرگ سے ’زوم‘ پر ویڈیو کال بھی کی لیکن انہوں نے صدر ٹرمپ کی پوسٹس ڈیلیٹ نہیں کیں۔

مارک زکربرگ کا اس معاملے پر موقف تھا کہ یہ پوسٹس فیس بک پر باقی رہنی چاہئیں تاکہ لوگوں کو پتا چل سکے کہ امریکہ میں ہونے والے پرتشدد احتجاجی مظاہروں کے جواب میں حکومت کیا کرنے جا رہی ہے۔

اس پر شہری و انسانی حقوق کے لیڈرز نے مارک زکربرگ کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا موقف سمجھ سے بالاتر ہے اور وہ صدر ٹرمپ کی لوگوں پر تشدد کو مسلط کرنے کی دھمکیوں کا انوکھا جواز پیش کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ ان پوسٹس میں صدر ٹرمپ نے امریکہ میں ہونے والے پرتشدد احتجاجی مظاہروں کے متعلق کہا تھا کہ مظاہرین کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی تاہم ان کے الفاظ انتہائی سخت تھے۔ ایک پوسٹ میں انہوں نے لکھ رکھا ہے کہ ”جب لوگ لوٹ مار کریں گے

تو ان پر گولیاں تو چلائی جائیں گی۔“اس پوسٹ کو بھی ٹوئٹر نے فلیگ کر رکھا ہے لیکن فیس بک پر یہ معمول کی پوسٹس کی طرح اب بھی موجود ہے۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

خطرناک سمندری طوفان کراچی کے ساحل سے کتنی دور ہے؟

بدھ جون 3 , 2020
محکمہ موسمیات نے آگاہ کیا ہے کہ بحیرہ عرب میں بننے والا طوفان ” نثارگا” کراچی کے ساحل سے 970 کلومیٹر کی دوری پر ہے، یہ طوفان بدھ کی رات کو بھارتی ساحل سے ٹکرائے گا۔ جنوبی مشرقی بحیرہ عرب میں بننے والے سائیکلون نثارگا کی شدت میں تیزی آتی […]

کیلنڈر

اکتوبر 2020
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 1234
567891011
12131415161718
19202122232425
262728293031  
%d bloggers like this: