زیرالتواء مقدمات کی قصور وار عدالتیں نہیں کوئی اور ہے، چیف جسٹس

چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ زیرالتواء مقدمات کی قصور وار عدالتیں نہیں کوئی اور ہے۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ایک دیوانی مقدمے کی سماعت کے دوران اہم ریمارکس دیے کہ عدالتوں کو زیرالتواء مقدمات کا طعنہ دیا جاتا ہے،

لیکن اس کی قصور وار عدالتیں نہیں کوئی اور ہے، ججز کی 25 فیصد خالی آسامیاں پُر کر دی جائیں تو دو سال میں زیر التواء مقدمات ختم ہوجائیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ہمارے ججز زیر التواء مقدمات نمٹانے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں، ایک سال میں 31 لاکھ مقدمات نمٹائے گئے ہیں

جن میں سے صرف سپریم کورٹ نے 26 ہزار مقدمات نمٹائے ہیں، اس کے مقابلے میں امریکا کی سپریم کورٹ نے ایک سال میں 80 سے 90 مقدمات نمٹائے ہیں۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ 21 سے 22 کروڑ کی آبادی کے لئے صرف 3 ہزار ججز ہیں اور عدالتوں میں اب زیر التواء مقدمات کی تعداد 19 لاکھ ہوگئی ہے۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

غیر قانونی منی مارکیٹ مسمار

جمعہ مارچ 8 , 2019
کراچی ( على احمد ، نمائندە خصوصى ) ڈی جی ایس بی سی اے کی ہدایت پر ڈیمالیشن سیکشن ون اور ٹو کا سینئر ڈائریکٹر اے جی سولنگی اور ڈائریکٹر سجاد خان کی سربراہی میں اورنگی ٹاون قصبہ علی گڑھ میں گرینڈ آپریشن غیر قانونی منی مارکیٹ مسمار کر دی […]

کیلنڈر

اکتوبر 2021
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 123
45678910
11121314151617
18192021222324
25262728293031
%d bloggers like this: