نیشنل ایکشن پلان: اب تک 121 افراد کو حفاظتی تحویل میں لیا گیا، وزارتِ داخلہ

قومی ایکشن پلان کے تحت 121 افراد کو اب تک حفاظتی تحویل میں لے لیا گیا۔

وزارتِ داخلہ کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق نیشنل ایکشن پلان کے تحت صوبائی حکومتوں نے 182 مدارس، 34 سکولوں اور 5 کالجوں کو اپنی تحویل میں لیا ہے۔اس کے علاوہ صوبائی حکومتوں نے 163 ڈسپنسریوں، 184 ایمبولینسز اور8 دفاتر کو بھی اپنی تحویل میں لیا ہے۔

نیشنل ایکشن پلان کے تحت سندھ میں56 مدارس،سکولزکوسرکاری تحویل میں لے لیاگیا،محکمہ داخلہ سندھ نے نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے، نوٹیفکیشن کے مطابق تمام ادارے محکمہ اوقاف کے زیرانتظام چلائے جائیں گے۔ادارے کراچی،حیدرآباد،مٹیاری،جامشورواوردیگرشہروں میں ہیں ،نوٹیفکیشن کے مطابق تمام اداروں کوعام شہریوں کیلئے چلایاجائے گااوررکاوٹ ڈالنے والوں کیخلاف قانونی کارروائی ہوگی۔

سی ٹی ڈی اورحساس اداروں کادیگرشہروں میں بھی آپریشن جاری ہے جبکہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت لاہور میں کارروائی میں کالعدم تنظیموں کے 11 افرادکو گرفتارکر لیاگیا۔

وزارت داخلہ کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ کالعدم تنظیموں کےخلاف آپریشن نیشنل ایکشن پلان کے تحت جاری ہے، وزارت داخلہ صوبائی حکومتوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کےساتھ رابطے میں ہے۔

واضح رہے کہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت کالعدم تنظیم جیشِ محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر کے بھائی مفتی عبدالرؤف اور بیٹے حماد اظہر کو بھی حفاظتی تحویل میں لیا گیا ہے۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

ٹرکش اسکالرشپ پروگرام میں بڑے پیمانے میں دلچسپی پر اپلائی کرنے کی تاریخ میں توسیع

جمعرات مارچ 7 , 2019
صدر ادارہ ایرین نے سال 2019 کے لیے درخواستیں دینے کے عمل میں وسیع پیمانے کی دلچسپی کا شکریہ ادا کیا ٹرکی اسکالرشپ پروگرام میں 1 لاکھ 45 ہزار 700 افراد نے درخواستیں جمع کرائی ہیں۔ ادارہ برائے سمندرپار ترک اور ترک برادریPresidency for Turks Abroad and Related Communities جسے […]

کیلنڈر

نومبر 2020
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 1
2345678
9101112131415
16171819202122
23242526272829
30  
%d bloggers like this: