قطری امیر کا عمران خان کو فون، بھارتی پائلٹ رہا کرنے کے اقدام کی تعریف

قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بھارتی فضائیہ کے جنگی قیدی وینگ کمانڈر ابھی نند کو جذبہ خیر سگالی کے تحت رہا کرنے کے فیصلے کو قابل مستحسن قرار دیا۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ قطر کے امیر نے فون پر وزیراعظم سے بات چیت کی اور ان کے اقدام کو سراہا۔

اس حوالے سے دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے ٹوئٹ کیا کہ ’قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی نے پاکستان اور بھارت کے مابین جارحیت کو ’فوراً کم‘ کرنے کے لیے مذکورہ اقدام بہت ضروری کہا تاہم انہوں نے اس معاملے اپنے تعاون کی پیشکش بھی کی‘۔

قطری نیوز ایجنسی کے مطابق مسلم ممالک کے دونوں رہنماؤں نے پاک بھارت کے مابین حالیہ تنازعات سمیت خطے اور عالمی سطح پر رونما ہونے والے سیاسی حالات پر تبصر کیا۔

نیو ایجنسی نے رپورٹ کیا کہ ’قطری امیر نے دونوں ممالک کو تحمل پر مبنی رویہ اختیار کرنے کی تلقین کی‘۔

دوسری جانب بھارتی میڈیا نے گزشتہ روز رپورٹ کیا کہ قطر کے امیر نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے فون پر رابطہ کیا۔

نیوز 18 کے مطابق دونوں رہنماؤں نے علاقائی صورتحال پر تبصرہ کیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مودی نے کہا تھا کہ ’دہشت گردی خطے میں امن اور سیکیورٹی کے وسیع خطرہ ہے اور تمام نوعیت کی دہشت گردی کے خاتمےکے لیے ’فوری اقدامات‘ کی ضرورت ہے‘۔

خیال رہے کہ یکم مارچ کو بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو سخت سیکیورٹی میں واہگہ بارڈر پر بھارتی حکام کے حوالے کردیا گیا تھا۔

پاکستان کی جانب سے بھارتی طیاروں کو گرانے کے بعد گرفتار کیے گئے بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو تمام کاغذی کارروائی کے بعد واہگہ بارڈر پر بھارتی حکام کے حوالے کر دیا گیا اور وہ واپس اپنے ملک پہنچایا گیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل دفتر خارجہ نے پاکستان کی حراست میں موجود بھارتی پائلٹ ابھی نندن کی حوالگی سے متعلق باضابطہ طور پر آگاہ کردیا تھا۔

خیال رہے کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان نے اعلان کیا تھا کہ ہم امن کے لیے بھارت کے گرفتار پائلٹ ابھی نندن کو رہا کردیں گے۔

پاک-بھارت کشیدگی
واضح رہے کہ 14 فروری کو بھارت کے زیر تسلط کشمیر کے علاقے پلوامہ میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس کی بس پر حملے میں 44 پیراملٹری اہلکار ہلاک ہوگئے تھے اور بھارت کی جانب سے اس حملے کا ذمہ دار پاکستان کو قرار دیا گیا تھا جبکہ پاکستان نے ان الزامات کی تردید کی تھی۔

26 فروری کو بھارت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا تھا کہ بھارتی فضائیہ کے طیاروں نے پاکستان کی حدود میں در اندازی کرتے ہوئے دہشت گردوں کا مبینہ کیمپ کو تباہ کردیا۔

بھارت کی جانب سے آزاد کشمیر کے علاقے میں دراندازی کی کوشش کو پاک فضائیہ نے ناکام بناتے ہوئے اور بروقت ردعمل دیتے ہوئے دشمن کے طیاروں کو بھاگنے پر مجبور کیا تھا۔

بعد ازاں وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا ہنگامی اجلاس ہوا تھا، جس میں بھارتی دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان نے واضح کیا تھا کہ مناسب وقت اور جگہ پر بھارتی مہم جوئی کا جواب دیا جائے گا۔

اس اہم اجلاس کے فوری بعد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر دفاع پرویز خٹک، وزیر خزانہ اسد عمر نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس کی تھی، جس میں بھی شاہ محمود قریشی نے بھارتی عمل کو جارحانہ قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان اس کا جواب دے گا۔

بعد ازاں پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے بھی ایک پریس کانفرنس کے دوران بھارت کو خبردار کیا تھا کہ اب وہ پاکستان کے جواب کا انتظار کرے جو انہیں حیران کردے گا، ہمارا ردِ عمل بہت مختلف ہوگا، اس کے لیے جگہ اور وقت کا تعین ہم خود کریں گے۔

میجر جنرل آصف غفور نے کہا تھا کہ بھارت نے دعویٰ کیا کہ اس کے طیارے 21 منٹ تک ایل او سی کی دوسری جانب پاکستان کی فضائی حدود میں دراندازی کرتے رہے جو جھوٹے دعوے ہیں۔

جس کے بعد 27 فروری کو پاک فضائیہ نے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے بھارتی فورسز کے 2 لڑاکا طیاروں کو مار گرایا تھا۔

پاک فوج کے ترجمان نے بتایا تھا کہ فضائی حدود کی خلاف ورزی پر دونوں طیاروں کو مار گرایا، جس میں سے ایک کا ملبہ آزاد کشمیر جبکہ دوسرے کا ملبہ مقبوضہ کشمیر میں گرا تھا۔

ترجمان پاک فوج نے کہا تھا کہ بھارتی طیاروں کو مار گرانے کے ساتھ ساتھ ایک بھارتی پائلٹ ونگ کمانڈر کو بھی گرفتار کیا گیا۔

واقعے کے بعد وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ جو میلی آنکھ سے دیکھے گا پاکستان اسے جواب دینے کا حق رکھتا ہے، کل بھی کہا تھا کہ پاکستان جواب ضرور دے گا۔

fakharzafar7

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

مجھے نہیں، جو مسئلہ کشمیر حل کرائے اسے نوبل انعام دیا جائے، عمران خان

پیر مارچ 4 , 2019
وزیر اعظم عمران خان نے سوشل میڈیا پر اپنے لیے جاری نوبل انعام کی مہم پر بالآخر لب کشائی کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں نوبل انعام کا حقدار نہیں۔ بھارت اور پاکستان کے درمیان جاری حالیہ کشیدگی کے دوران گرفتار بھارتی پائلٹ ابھی نندن کی رہائی کے اعلان کے […]

کیلنڈر

نومبر 2020
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 1
2345678
9101112131415
16171819202122
23242526272829
30  
%d bloggers like this: