اوورسیز پاکستانی کو انتقال کے بعد انصاف ملا، 45 سال پرانے مقدمے کا فیصلہ آگیا

اسلام آباد: اسلام آباد ہائیکورٹ نے 45 سال پرانے مقدمے کا فیصلہ سنادیا۔

ہائی کورٹ میں اوورسیز پاکستانی کی قیمتی پراپرٹی فراڈ سے ہتھیانے کے مقدمے کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ نے 45 سال پرانے مقدمے کا فیصلہ سنادیا۔

عدالت نے قرار دیا کہ اوورسیز پاکستانی اکبر حسین کا گھر 45 سال قبل جعلی کاغذات پر ٹرانسفر کیا گیا، فراڈ کے بعد گھر خریدنےوالے غلام احمد کو جائز خریدار قرار نہیں دیا جاسکتا، گھر کی غیرقانونی ٹرانسفر میں سی ڈی اے کی ملی بھگت کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے گھر خریدار غلام احمد کی درخواست مسترد کرتے ہوئے کہا کہ جب کسی عمل کی بنیاد ہی غیرقانونی ہو تو اس پر کھڑی پوری عمارت گرجاتی ہے۔

واضح رہے کہ گھر کے اصل مالک اوورسیز پاکستانی اکبر حسین مقدمے کی پیروی کرتے ہوئے انتقال کرگئے۔ مقدمہ سول عدالت کے بعد اسلام آباد ہائیکورٹ پہنچا۔

چیف جسٹس نے مختصر فیصلہ سنایا تھا جس کا تفصیلی فیصلہ آج جاری کیا گیا۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

دعا زہرہ کے اغوا کے وقت ظہیر کراچی میں موجود تھا، رپورٹ میں انکشاف

ہفتہ جولائی 16 , 2022
کراچی: ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ شرقی کی عدالت میں دعا زہرا اغوا کیس کے تفتیشی افسر نے رپورٹ میں ملزم ظہیر کی لڑکی کے اغوا کے وقت کراچی میں موجودگی کا انکشاف کردیا۔ کراچی سٹی کورٹ میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج شرقی کی عدالت میں دعا زہرا کے مبینہ […]

کیلنڈر

نومبر 2022
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 123456
78910111213
14151617181920
21222324252627
282930  
%d bloggers like this: