معاشی بحالی کیلیے اہداف پر مشتمل جامع پلان ناگزیر

اسلام آباد: معیشت کی بحالی کے لیے ایک حقیقت پسندانہ اور جامع پلان تشکیل دینا بہت ضروری ہے۔

اگر آئی ایم ایف سے ایک ارب ڈالر کی قسط مل جائے، قرضوں کی واپسی کی ڈیڈلائن میں توسیع بھی مل جائے اور دوست ممالک سے توازن ادائیگی کے لیے وصول کردہ ڈپازٹس کی واپسی کی مدت میں بھی رعایت مل جائے تو یہ ایک اچھا منظرنامہ ہو گا، مگر سوال یہ ہے کہ اس کے بعد کیا ہوگا؟

چند سال کے بعد قرضوں کی ادائیگی کی ڈیڈ لائن پھر آجائے گی، پھر آئی ایم ایف سے قرض بھی ملنے والا نہ ہو اور دوست ممالک کے ڈپازٹس بھی لوٹانے ہوں اور جب تیل اور بجلی کے نرخوں اور ٹیکسوں میں اضافے کی گنجائش بھی باقی نہ ہو؟کیا اس صورتحال کے لیے ہمارے پاس کوئی پلان بی، یا کوئی پلان اے ہی ہے؟ حکومت اس وقت ہنگامی صورتحال سے نمٹ رہی ہے، مگر اس ایمرجنسی کے بعد بحالی کی منصوبہ بندی بھی ہونی چاہیے۔

معیشت کی بحالی کے لیے ایک حقیقت پسندانہ اور جامع پلان تشکیل دینا بہت ضروری ہے جس میں مختصر، وسط اور طویل مدتی اہداف واضح کیے گئے ہوں۔ مختصر مدتی ہدف کے طور پر روپے کی ناقدری کی وجہ سے اشیائے صرف کی گرانی اور کمزور طبقے پر بڑھتے ہوئے دباؤ پر توجہ دی جائے۔

دوسرے یہ کہ سرکاری شعبے کے نقصانات بالکل سرکاری تجارتی اداروں کے نقصان میں جانے پر توجہ دی جائے۔ اس کے بعد غیرترقیاتی اخراجات میں کمی کو ہدف بنایا جائے۔

نیوز ڈیسک

ای این این ٹی وی کا نیوز ڈیسک نمائندگان کی خبروں کے ساتھ ساتھ دنیا بھر میں رونما ہونے والے واقعات کو اپنی قارئین کے لیے اپنی ویب سائٹ پر شائع کرتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Next Post

سعودی عرب سفارتی مذاکرات کی بحالی چاہتا ہے، ایران کا دعویٰ

پیر جون 27 , 2022
تہران: ایران نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی عرب ان کے ساتھ سفارتی مذاکرات کی بحالی کا خواہش مند ہے۔  عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی عرب اور ایران کے درمیان سفارتی تعلقات 2016 سے منقطع ہیں تاہم ولی عہد محمد بن سلمان کے وژن 2023 کے تحت تنازعات کو […]

کیلنڈر

دسمبر 2022
پیر منگل بدھ جمعرات جمعہ ہفتہ اتوار
 1234
567891011
12131415161718
19202122232425
262728293031  
%d bloggers like this: